نئی رت

0
40

ٹھٹھر رہی ہے ہر کلی
شجر شجر ہے منجمد
ہوا خنک، فضا خنک
ہے رات سرد، سرد دن
تپش نہیں ہے دھوپ میں
حرارت آگ میں نہیں
یہ مردہ جسم برف برف
یہ ہونٹ سرد، گال زرد
دیا دیا، بجھا بجھا
وہ گرمجوشیاں نہیں
وہ بادہ نوشیاں نہیں
مرے خدا! مرے خدا! بتا، بتا
یہ زندگی کی رت ہے کیا؟
یہ رت ہے کیا!

Rate this post
Previous articleمیں –
Next articleنالہ نارسا نہیں کچھ بھی

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here